ڈاکٹر لطف الرحمان نے آزادکشمیر یونیورسٹی میں‌کرپشن کا پنڈورہ باکس کھول دیا

مظفرآباد(اوورسیز نیوز آن لائن)پاکستان تحریک انصاف آزاد کشمیر کے بانی صدر و سابق امیدوار اسمبلی حلقہ 3سٹی ڈاکٹر لطف الرحمان نے آزادجموں وکشمیر یونیورسٹی میں میرٹ پامالی‘ بدانتظامی اورکرپشن کا پنڈورہ بکس کھول دیا۔ جامعہ کشمیر اس وقت تعلیمی ‘ مالی اور انتظامی اعتبار سے تباہی کے دہانے پر ہے ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر کلیم عباسی نے کرپشن کا بازار گرم کررکھا ہے۔ وزیراعظم آزادکشمیر ‘ چیف سیکرٹری اوردیگر متعلقہ ادارے وائس چانسلر کے غیر قانونی اقدامات اور کرپشن کا نوٹس لیں۔ سب سے بڑے تعلیمی ادارے کو مافیا سے آزاد کرایا جائے۔ جامعہ میں سکیل 1سے سکیل 16تک تقرریاں مظفرآباد ڈویژن سے کی جائیں۔ کرپشن کے ثبو ت جی او سی مری اور چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن کو ارسال کرینگے ۔ ہم اس کرپشن کیخلاف بھرپور جدوجہد کرینگے۔ادارے کو بچانے کیلئے سب کو کردار ادا کرنا ہوگا۔

ڈاکٹر لطف الرحمان نے مرکزی ایوان صحافت میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ جامعہ کشمیر 38برس میں مقاصد حاصل نہیں کرسکی ۔ تعلیم ڈگری نہیں بلکہ معیار کا نا م ہے۔ اس سب سے بڑے ادارے کو جس سے چار یونیورسٹیوں نے جنم لیا کو سیاسی ‘ برادری اور علاقائی ازم کا شکار کردیا گیاہے ۔ موجودہ وی سی کی کرپشن کیخلاف کیس اب بھی زیر کار ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ یونیورسٹی میں پانچ پانچ سال مکمل کرنے واہے ملازمین کو فارغ کرکے من پسند چہیتوں کو بھرتی کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ کلیم عباسی ملازمین سے زیادتی اور مظفرآباد دشمنی میں کوئی کسر نہیں چھوڑتے ۔ انہوں نے راجہ قیوم نامی افسر کو کرپشن کا مہرہ رکھا ہوا ہے۔ سرکاری رقوم سے عزیزوں کونوازا جارہا ہے۔ یونیورسٹی کی44کروڑ کی رقم سنڈیکیٹ کے فیصلے کے مغائر معائدہ کے علاوہ دوسرے بینک میں رکھ کرعزیزوں کو مفاد پہچایا ۔گرلز ہاسٹلز کے واقعات میں بھی ان کے عزیز ملوث ہیں ۔

انہوں نے مزید کہاکہ جامعہ کی آمدن کروڑوں میں ہے لیکن سلیبس ہیں نہ کتب ہیں اور نہ ہی کوالیفائیڈ فیکلٹی ہے ۔ وزٹنگ لیکچرر پر کام چلایا جارہاہے ۔ ادارے کو کمائی کا بھی ذریعہ بنادیاگیا ہے۔ وائس چانسلر میرپوریونیورسٹی حبیب الرحمان کیخلاف بھی چار ریفرنسز ہیں۔ موصوف کو بھی توسیع دیدی گئی ۔ ان کی کرپشن کے چرچے بھی زبان زد عام ہیں۔ میرپور کے طلبہ احتجاج پر ہیں۔

انہوں نے کہاکہ مظفرآباد ڈویژن کے سے تعلق رکھنے والے ملازمین کو انتقام کانشانہ بنایا جارہا ہے۔ جسے کسی صورت قبول نہیں کیا جائے گا۔ڈین سائنسز کا ایک عزیز 8سال سے چہلہ کیمپس اور ستی کیمپس کے کیفے ٹیریا پر قابض ہے۔

انہوں نے کہاکہ وزیراعظم آزادکشمیر ‘ چیف سیکرٹری اوردیگر متعلقہ ادارے وائس چانسلر کے غیر قانونی اقدامات اور کرپشن کا نوٹس لیں۔ اور جامعہ کو تباہ ہونے سے بچائیں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے جس طرح پاکستان میں کرپشن کیخلاف علم بغاوت بلند کیا اس کی تقلید یہاں بھی ہونے چاہیے ۔ عمران خان کی جدوجہد کے نتیجے میں آج ایک کرپٹ وزیراعظم کٹہرے میں ہے ۔ وہ کرپٹ پھر بھی میں نہ مانوں کے مصداق کہتا ہے مجھے کیوں نکالا ؟ وہ وقت دور نہیں جب اس کے سارے حواری بھی نکل جائینگے۔ آمدہ الیکشن میں تحریک انصاف بھاری اکثریت حاصل کرے گی اور عمران خان ملک کے وزیراعظم بنیں گے۔